آخری کتاب یا کتب ؟ The Last Book or Books?

اس ریسرچ پیپر میں دین اسلام اور تاریخ کے سب سے اہم موضوع کو زیر بحث لایا گیا ہے …

This is not an ordinary Thesis, it touches the most important topic of Islamic theology and history, a grave error (or deception?) ignored for twelve centuries, discussion is considered taboo…. Keep reading ….[……]


بسم الله الرحمن الرحيم 

 لآ اِلَهَ اِلّا اللّهُ مُحَمَّدٌ رَسُوُل اللّهِ

شروع اللہ کے نام سے، ہم اللہ کی حمد کرتے ہیں اس کی مدد چاہتے ہیں اوراللہ سے مغفرت کی درخواست کر تے ہیں. جس کواللہ ھدایت دے اس کو کوئی  گمراہ نہیں کرسکتا اورجس کو وہ اس کی ہٹ دھرمی پر گمراہی پر چھوڑ دے اس کو کوئی ھدایت نہیں دے سکتا. ہم شہادت دیتے ہیں کہ اللہ کے سوا کوئی عبادت کے لائق نہیں، محمد ﷺ اس کے بندے اورخاتم النبین ہیں اور انﷺ کے بعد کوئی نبی یا رسول نہیں ہے. درود و سلام ہوحضرت محمّد ﷺ  پر اہل بیت (رضی اللہ تعالیٰ عنہ) اور اصحاب (رضی اللہ تعالیٰ عنہ) اجمعین پر. جو نیکی وه کرے وه اس کے لئے اور جو برائی وه کرے وه اس پر ہے، اے ہمارے رب! اگر ہم بھول گئے ہوں یا خطا کی ہو تو ہمیں نہ پکڑنا.


آخری کتاب یا کتب ؟ The Last Book or Books

دین اسلام کی بنیاد قرآنو سنت پر ہے – قرآن اللہ کی طرف سے نبی آخر الزمان حضرت محمد  اللهﷺ پرتئیس برس میں نازل ہوا، جس کو حفظ اور کتابت کے زریعہ محفوظ کیا گیا، خلفاء راشدین کی کوششوں سے مدون نسخےحضرت عثمان (رضی الله) کے دور میں تقسیم کر دئےگئے- قرآن تا قیامت بنی نوع انسانیت کے لیے راہ ہدایت و نجات ہے- رسول اللهﷺ کی سنت قرآن کا عملی نمونہ ہے جو تواتر سے نسل در نسل منتقل ہوتی ہے- احادیث کی کتب میں رسول اللهﷺ اور صحابہ اکرام سے منسوب کلام، عمل اور واقعات ہیں جن کو تحریری  شکل میں خلفاء راشدین نے کتاب اللہ کے علاوہ مدون کرنا ضروری نہ سمجھا کسی زاتی وجہ سے نہیں کہ ان سے زیادہ رسول اللهﷺ سے محبت کون کرسکتا ہے؟ حضرت عمر (رضی الله) اور حضرت علی (رضی الله) بھی کتاب اللہ کے ساتھ کسی اور کتاب کودرست نہیں سمجھتے تھے کہ پہلی قومیں اس طرح کتاب اللہ کو چھوڑ کر برباد ہوئیں- قرآن کسی اورحدیث، کلام ، کتاب کا انکارکرتا ہے۔  خلفاء راشدین کے فیصلہ پر پہلی صدی حجرہ تک عمل ہوتا رہا- تیسری صدی میں مشہور احادیث کی کتب مدون ہوئیں ، جس کو وہ بہت فائدہ مند سمجھتے تھے، دین کی بنیاد انسانی نفس ، سمجھ کے مطابق فائدہ، نقصان پر نہیں بلکہ قرآن و سنت کی بنیاد پر ہوتی ہے، کس عمل میں نقصان زیادہ ہے یا فائدہ یہ الله تعالی کے بعد رسول الله صلی اللہ علیہ وسلم اور پھر خلفاء راشدین بہترسمجھتے ہیں، یہ بالترتیب اطاعت ہی اسلام کی بنیاد ہے-( وَقَالُوا سَمِعْنَا وَأَطَعْنَا) 

رسول اللهﷺ نے خلفاء راشدین  کی سنت اور خاص طور پر حضرت ابو بکر صدیق (رضی الله) اور حضرت  عمر (رضی الله) کا نام لے ان کی سنت پر چلنے کا حکم دیا – رسول اللهﷺ کی  اطاعت الله تعالی کی اطاعت ہے اور خلاف درزی اللہ کے حکم کا انکار۔ ایک کام جو شرعی طور پر جائز نہ ہو اس کو کیسےدرست تسلیم کیا جاسکتا ہے جبکہ نقصانات بھی ظاہرہوچکے ہوں- احادیث کی کتب کو وحی کے طور پر قرآن کے ساتھ لازم ملزوم سمجھا جاتا ہے- جبکہ اسلام کے بنیادی 6 عقائید میں صرف اللہ کی کتب جو پیغمبروں پر نازل ہوئیں ایمان لازم ہے۔ احادیث کی غیرمستند کتب ( سند دینے والے تو منع کرکہ دنیا سے چلے گئیے) سے مستند ترین کتاب اللہ کی اہمیت کم ہوتے ہوتے تلاوت تک محدود ہو چکی ہے، مدارس میں بھی قرآن پر توجہ سرسری ہے- ایک ڈسکشن میں یہ معلوم  کرکہ افسوس ہوا کہ اسلامک اسٹڈیز میں ڈاکٹریٹ کرنے والے عالم دین کو یہ علم نہیں کہ قرآن کے مطابق یہود و نصاری نےعلماء اور درویشوں کو اللہ کے سوا اپنا رب بنا لیا (9:31)- رسول اللهﷺ کے بعد دین اسلام کی ترویج میں خلفاء راشدین اور صحابہ اکرام نے مرکزی کردار ادا کیا، بعد والے کسی طرح بھی ان کو نظر انداز کرکہ اپنی طرف سے دین کی بنیاد میں ترامیم کرنے کا اختیار نہیں رکھتے یہ دروازہ بند ہوچکا جو ہزاروں تاویلیں کرنے سے بھی نہیں کھل سکتا-  اسلام مکمل اطاعت ( total submission ) کا نام ہے- پہلی صدی کے بعد امام ابوحنیفہ نے فقہ پر کام کیا وہ محدث بھی تھے کسی بھی مشہور محدث سے زیادہ، صحابہ سے ملاقات کا بھی تذکرہ ملتا ہے ، مگر انہوں نے حدیث کی کتاب مدون نہ کی ، کیوں کہ وہ خلفاء راشدین کے مقام کو اپنی عقل اور نفس سے بلند سمجھتے تھے

قرآن کی اسلام اور مسلمانوں کی زندگی میں مرکزی حثیت کو بحال کرنے کی اشد ضرورت ہے، تاکہ  فرقہ واریت ، اخلاقی پستی، فکری جمود اور دوسرے مسائل کا سدباب ہو سکے- اس لیئے ضرورت ہے کہ اسلام میں کتاب اللہ کے ساتھ دوسری کتب مدون کرنےکے معامله  کا قرآن و سنت کی روشنی میں تحقیق و تجزیہ کیا جایےکہ:

 کیا صرف قرآن الله تعالی کی آخری کتاب ہے یا اس کے ساتھ دوسری کتب بھی شامل ہیں؟ 

حقائق سب کےعلم میں لائے جائیں چاہےکتنے تلخ بھی ہوں، تاکہ علماء پرانی غلطیوں کا لاحاصل دفاع کرنےکی بجائے, پہلی صدی کےسادہ ، آسان، کامل دین اسلام  کو اصل شکل میں بحال کرنے میں اپنا مثبت کردار ادا کرسکیں- الله تعالی کا فرمان ہے:

یُرِیۡدُ اللّٰہُ لِیُبَیِّنَ لَکُمۡ وَ یَہۡدِیَکُمۡ سُنَنَ الَّذِیۡنَ مِنۡ قَبۡلِکُمۡ وَ یَتُوۡبَ عَلَیۡکُمۡ ؕ وَ اللّٰہُ عَلِیۡمٌ حَکِیۡمٌ ﴿۲۶﴾ وَ اللّٰہُ یُرِیۡدُ اَنۡ یَّتُوۡبَ عَلَیۡکُمۡ ۟ وَ یُرِیۡدُ الَّذِیۡنَ یَتَّبِعُوۡنَ الشَّہَوٰتِ اَنۡ تَمِیۡلُوۡا مَیۡلًا عَظِیۡمًا ﴿۲۷﴾ يُرِيدُ اللَّـهُ أَن يُخَفِّفَ عَنكُمْ ۚ وَخُلِقَ الْإِنسَانُ ضَعِيفًا ﴿٢٨﴾

اللہ چاہتا ہے کہ تم پر ان طریقوں کو واضح کرے اور انہی طریقوں پر تمہیں چلائے جن کی پیروی تم سے پہلے گزرے ہوئے صلحاء کرتے تھے ۔ وہ اپنی رحمت کے ساتھ تمہاری طرف متوجّہ ہونے کا ارادہ رکھتا ہے ، اور وہ علیم بھی ہے اور دانا بھی- ہاں، اللہ تو تم پر رحمت کے ساتھ توجہ کرنا چاہتا ہے مگر جو لوگ خود اپنی خواہشات نفس کی پیروی کر رہے ہیں وہ چاہتے ہیں کہ تم راہ راست سے ہٹ کر دور نکل جاؤ. اللہ تم پر سے پابندیوں کو ہلکا کرنا چاہتا ہے کیونکہ انسان کمزور پیدا کیا گیا ہے (4:26,27,28]   

Allah wishes to turn towards you in mercy, but those who follow their own passions want you to drift far away from the right path. (27) God wishes to lighten your burdens, for, all human beings have been created weak.. (Quran;4:26,27,28)

Keep reading in English …..[……..]

یہ “ریسرچ پیپر” اسی اعلی مقصد کے حصول کی ایک کاوش ہے- “ریسرچ پیپر” کے تین حصے ہیں ،

1.  “اہم معلومات” 

2. ” تحقیق و تجزیہ” 

3.سوال و جواب Q&A :  صرف اس مقصد کے لیے مخصوص وہاٹس ایپ گروپ میں اعلی تعلیم یافتہ، اپنے اپنے فیلڈ میں ایکسپرٹ دوستوں سے دلچسپ سوال و جواب (Q&A) – اس پیپر میں کچھ تکرار (repetitions) ملے گی کہ گراں محسوس ہو مگر موضوع کی اہمیت  کے پیش نظر تکرار ناگریز ہے , جہاں ممکن ہو سکا تکرار کو کم کرنے کے لیے “فٹ نوٹس” پر ویب لنکس متعلقہ موضوع پر مواد مہیا کرتے ہیں، جس سے فائدہ حاصل کریں- اردو زبان پر عبور نہیں ، غلطیاں نظر انداز کرتے ہوے مشمولات (contents) پرتوجہ دیں-

مکمل مطالعہ اورغور و فکر کے بعد مفید مشورے اور تجاویز کا خیر مقدم ، لیکن تنقید برایے تنقید، اور قرآن کی “محکم آیات” کےعلاوہ آیات سے ظن ,گمان قیاس آرائیاں, اندازے,آراء (speculations, inferences, deductions، guess work, inference) ,نتیجه گیری, کی بُنیادووں پر دین کی نہ عمارت کھڑی کی جاسکتی نہ نۓ “بنیادی احکام’  [ Fundamentals of Faith] نکالے جاسکتے ہیں , جبکہ قرآن کی واضح محکم آیات موجود ہوں جو سنت (اور غیر متنازعہ  تاریخی حقائق) سے بھی ثابت ہوں: 

قرآن سے ملنے والا علم وہ حق ہے جس کے مقابلے میں ظن و گمان کوئی حیثیت نہیں رکھتا۔ (النجم 53:28)

 قرآن ایسا کلام ہے جس میں کوئی ٹیڑھ نہیں جو بالکل سیدھی بات کرنے والا کلام ہے (الکہف 18:1,2)

اور ہم نے آپ پر ایسی کتاب نازل کی ہے جس میں ہر چیز کی وضاحت موجود ہے اور (اس میں) مسلمانوں کے لئے ہدایت، رحمت اور خوشخبری ہے (16:89)

وہی تو ہے جس نے آپ پر کتاب نازل کی۔ جسکی کچھ آیات تو محکم ہیں اور یہی (محکمات) کتاب کی اصل بنیاد ہیں اور دوسری متشابہات ہیں۔ اب جن لوگوں کے دل میں کجی ہے (پہلے ہی کسی غلط نظریہ پر یقین رکھتے ہیں) وہ فتنہ انگیزی کی خاطر متشابہات ہی کے پیچھے پڑے رہتے ہیں۔ اور انہیں اپنے حسب منشا معنی پہنانا چاہتے ہیں حالانکہ ان کا صحیح مفہوم اللہ کے سوا کوئی بھی نہیں جانتا۔ اور جو علم میں پختہ کار ہیں وہ کہتے ہیں کہ ہم ان (متشابہات) پر ایمان لاتے ہیں۔ ساری ہی آیات ہمارے پروردگار کی طرف سے ہیں۔ اور کسی چیز سے سبق تو صرف عقلمند لوگ ہی حاصل کرتے ہیں. (قرآن 7:3)

جسے ہلاک ہونا ہے وہ دلیل روشن کے ساتھ ہلاک ہو اور جسے زندہ رہنا ہے وہ دلیل روشن کے ساتھ زندہ رہے، یقیناً خدا سُننے والا اور جاننے والا ہے (8:42)

ہر سخت جھوٹے گناہگار کے لیے تباہی ہے جو آیتیں اللہ کی اپنے سامنے پڑھی جاتی ہوئی سنے پھر بھی غرور کرتا ہوا اس طرح اڑا رہے کہ گویا سنی ہی نہیں تو ایسے لوگوں کو دردناک عذاب کی خبر ( پہنچا ) دیجئے  (الجاثية45:7,8)

بریگیڈئر آفتاب احمد خان (ر )

لاہور ،  پاکستان

5 فروری 2020  /10 جمادی الثانی 1441 ھ


اس تحقیق میں  دین اسلام اور تاریخ کے سب سے اہم موضوع کو زیر بحث لاتا ہے، ایک سنگین غلطی (یا دھوکہ ) جسے بارہ صدیوں سے نظرانداز کیا گیا ہے۔ براہ کرم جب آپ یہ تحقیق پڑھتے ہو تو پہلے الله سے ہدایت کی دعا ، سورہ الفاتحه پڑھ کر اپنے ذہن کو روایتی مذہبی پیشواؤں کی مخصوص سوچ سے آزاد رکھ کہ صرف  قرآن و سنت کو سوچ کا محور بنا کر چلنا ہو گا، اگر آپ ایسا نہیں کر سکتے اور مذہبی پیشواؤں کو قرآن کی اصطلاح  میں یہود و نصاریٰ کی طرح “رب” مانتے ہو ۓ کلام الله اور سنت  رسول کونذر انداز کرتے ہیں تو، یہ تحقیق آپ کے لیے نہیں ….

تحقیقی  “ریسرچ پیپر”  [Research Paper ]  اس پوسٹ میں بھی emb-d کر دیا ہے ، لیکن اسے بلاگ پوسٹ  میں بھی یھاں <<پڑھ سکتے ہیں>>. اس کے علاوہ “ریسرچ پیپر”  [Research Paper ] کو درج ذیل طریقہ سے پڑھ سکتے ہیں :

    1. PDF (A4  Size for printout) :(4.6 MB)  http://bit.ly/2uI2213
    2. PDF (A5) for Mobiles: (5MB) http://bit.ly/2OGJtB9
    3. Google Doc : http://bit.ly/31lYQV3      
    4. EPUB: (8 MB)  http://bit.ly/2SMsRZZ
    5. Urdu: https://QuranSubjects.blogspot.com/2020/01/why-quran.html
    6. English: https://QuranSubjects.wordpress.com/last-book
  • To Read English Translation.. open tab in new window from  <<here>>
    1. https://www.facebook.com/QuranSubject/posts/127125452151189
    2. Comments / Suggestions: https://www.facebook.com/QuranSubject/inbox
  • SHARE AS YOU PLEASE  — JAZAK ALLAH
  1. موبائل پر گوگل ڈوک ایپ [Google Doc App] میں پڑھیں ، یا
  2. گوگل ڈوک ایپ [Google Doc App] سے ڈاؤن لوڈ کریں اپنے پسندیدہ فارمیٹ ،  [Word Doc, PDF , Text, Web Page (html), rft, odt, EPUB]  میں … یا..
  3.   فائل PDF ڈاؤن لوڈ کریں اپنے پرنٹر یا مارکیٹ سے پرنٹ آوٹ حاصل کرکہ ہارڈ کاپی بھی حاصل کر سکتے ہیں …  پہلے تقریبا  پچاس صفحات [ Part1&2]  “ریسرچ پیپر”  [Research Paper ] ہے اور[ Part3] سوال و جواب[ Q&A] ہے .


سورة الفاتحة

بِسْمِ اللَّـهِ الرَّحْمَـٰنِ الرَّحِيمِ ﴿١﴾ الْحَمْدُ لِلَّـهِ رَبِّ الْعَالَمِينَ ﴿٢﴾ الرَّحْمَـٰنِ الرَّحِيمِ ﴿٣﴾ مَالِكِ يَوْمِ الدِّينِ ﴿٤﴾ إِيَّاكَ نَعْبُدُ وَإِيَّاكَ نَسْتَعِينُ ﴿٥﴾ اهْدِنَا الصِّرَاطَ الْمُسْتَقِيمَ ﴿٦﴾ صِرَاطَ الَّذِينَ أَنْعَمْتَ عَلَيْهِمْ غَيْرِ الْمَغْضُوبِ عَلَيْهِمْ وَلَا الضَّالِّينَ (قرآن1:7)

اللہ کے نام سے جو رحمان و رحیم ہے (1) تعریف اللہ ہی کے لیے ہے جو تمام کائنات کا رب ہے (2) رحمان اور رحیم ہے (3) روز جزا کا مالک ہے (4) ہم تیری ہی عبادت کرتے ہیں اور تجھی سے مدد مانگتے ہیں (5) ہمیں سیدھا راستہ دکھا (6) اُن لوگوں کا راستہ جن پر تو نے انعام فرمایا، جو معتوب نہیں ہوئے، جو بھٹکے ہوئے نہیں ہیں (قرآن1:7)

In the name of God, the Most Gracious, the Most Merciful. (1) All praise is due to God, the Lord of the Universe; (2) the Beneficent, the Merciful; (3) Lord of the Day of Judgement. (4) You alone we worship, and to You alone we turn for help. (5) Guide us to the straight path: (6) the path of those You have blessed; not of those who have incurred Your wrath, nor of those who have gone astray. (Quran 1:7)

آپ کو یہ فیصلہ کرنا ہوگا کہ آپ کیا اللہ کی کتاب قرآن،   رسول اللهﷺ ، خلفاء راشدین (رضی الله )، امام ابو حنیفہ (رح ) کے ساتھ کھڑے ہیں یا ان مذہبی پیشواؤں کے ساتھ جنہوں نے دھوکہ سے  دین کامل ، دین اسلام کی  اصل صورت ہیئت کو تبدیل کر دیا ..کیاآپ پہلی صدی حجرہ کے دین کی بحالی کی کوشش میں شامل ہو کر سرخرو ہونا پسند کریں گے یا  دوسرا راستہ اختیار کریں گے؟


 

قرآن، سنت رسول اللهﷺ ، خلفاء راشدین اور صحابہ اکرام کی سنت کی روشنی میں

Comeback to Quran & Sunnah

Plea to Reclaim The Original Islam of 1st Century Hijrah

Discussion on Research Work

Brigadier Aftab Ahmad Khan (R)

قرآن و سنت رسول اللهﷺ کی طرف واپسی

تحقیقی و تجزیہ 

  1. .حدیث کی کتابت قران کی طرح خلفاء راشدین نے کیوں نہ کی ؟
  2. علم حدیث , فرقہ واریت اورقران – تحقیقی مضامین….
  3. .کتابت حدیث کی تاریخ – نخبة الفکر – ابن حجرالعسقلانی – ایک علمی جایزہ:
    اسلام ؛ قرآن اور سنت پر عمل کرنے کا نام ہے۔اسلام کی بنیاد صرف رسول اللہﷺ سے نقل وسماع ہے، قرآن کریم بھی رسول اللہﷺ ہی کے ذریعہ ملا ہے؛ انھوں نے ہی بتلایا اور آیات کی تلاوت کی ،جوبطریقۂ تواتر…[Continue reading….]
    کتابت حدیث – عسقلانی

    حادیث کے وحی ہونے یا نہ ہونے کی جہت سے بعض علماءِ نے حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کی شخصیت کے دو حصے مقرر کر دیئے اور کہا کہ آپؐ کا ہر قول و فعل تو وحی نہیں البتہ آپؐ...[Continue reading…]

  4. دو اسلام – ڈاکٹر غلام جیلانی برق: https://wp.me/p9pwXk-1dYLast B
  5. Last Book-s Folder 
  6. متواتر احادیث
  7. Salaam, Islam, Muslim – سلام , اسلام ،مسلم